بعد إعلان المحكمة الانتخابیة عن إبعاد نائب فی الجمعیة الوطنیة المركزیة وهو الشیخ أكرم الفائز من دعم مجلس علماء الشیعة بعد تقدیم دعاوى كاذبة علیه من قبل التكفیریین وتعیین زعیم التكفیریین والمتمردین الشیخ أحمد لدهیانی نائباً فی الجمعیة الوطنیة المركزیة.
ومن هنا أعلن مجلس علماء الشیعة الیوم الجمعة الاحتجاج ضد هذا الإعلان الذی حصل أول مرة فی تاریخ باكستان ، ربما جاء هذا نتیجة الزیارات المتكررة للرؤساء الخلیجیین والهدایا التی جاؤوا بها والتی تقدر بملیار ونصف الملیار دولار.
وقال الأمین العام المركزی لجلس علماء الشیعة فی باكستان العلامة عارف حسین واحدی فی تصریحاته أن بعض القوى تحاول إدخال الأوغاد الخونة فی الجمعیة الوطنیة كتعویض عما خسروه فی الانتخابات، وهم یعرفون أننا أبطال المیادین وإن شاء الله سیهزمون هذه المرة أیضاً،
وأضاف أیضاً أن الحكومة الحالیة هی الملاذ الآمن لجیش الجنكوی، فهی لا تعاقب الجناة ولا تتخذ أی إجراء بحقهم بل على العكس فهی ترفع من معنویات المسلحین والقتلة الدمویین بتعلیق قانون الإعدام.
وقال إن إنجاح زعیم التكفیریین من قبل المحكمة برعایة الدولة دلالة على مؤامرة كبیرة،

وأخیراً قال أنه حصل على نسخة من القرار للرجوع إلى المحكمة العلیا، ومجلس علماء الشیعة یقوم بكافة الإجراءات اللازمة بهذا الصدد ونحن على استعداد لتكلیف محامیین بهذا الخصوص.


  • آخرین ویرایش:-
نظرات()   
   


suc-flag
 خیرپور کے موجودہ اور کٹھن حالات کے پیش نظر شیعہ علماء کونسل کے زیر اہتمام آج امام بارگاہ محبان حیدری میں اہم میٹنگ کا انعقاد کیا گیا- جس کی صدارت شیعہ علماء کونسل کے ضلعی صدر حجت الاسلام  والمسلمین علامہ سید اسد اقبال زیدی قمی نے کی- انتھائی اہمیت کی حامل میٹنگ میں شیعہ رابطہ کونسل،ضلعی امن کمیٹی،جے ایس او، سند شیعہ آرگنائزیشن،وفاق علما شیعہ پاکستان کے عھدیداروں ، سماجی شخصیات اور کثیر تعداد میں علماء کرام سمیت سو کے قریب تنظیمی کارکنان  نے شرکت کی- رپورٹ کے مطابق شرکاء میٹنگ نے 4 اپریل کو تکفیریوں کی جانب سے ممتاز گراوئڈ میں منعقدہ پروگرام کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ انتظامیہ تکفیریوں کو جاری کردہ پرمنٹ فی الفور کینسل کرے ورنہ خیرپور کے حالات تھس نھس ہو کر رہ جائیں گے. شرکاء اجلاس کا مزید  کہنا تھا کہ خیرپور شیعان حیدر کرار کے لئے تنگ کیا جا رہا ہے اور اس میں اپنے نادان دوستوں کی ڈیل کے تحت قوم کا کتنا بڑا سودہ کردیا گیا جس کے نتیجے میں ہم پہ قیامت ڈھائی گئی ہے- انہوں نے مزید کہا کہ تکفیریوں کی شرانگیز تقاریراورغلیظ الفاظ اسلام آباد اور کراچی میں بیٹھے افراد کو سننے میں نھیں آئیں گے جنہوں نے تکفیریوں کو عوامی اور سرکاری املاک پر جلسہ کرنے کا موقعہ فراہم کیا -. اجلاس میں شریک تمام تنظیموں کے عمائدین نے قائد ملت جعفریہ پاکستان حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی کی مدبرانہ قیادت ، کامیاب حکمت عملی اور فیصلوں کو سراہتے ہوئے خراج تحسین پیش کیا-


  • آخرین ویرایش:-
نظرات()   
   

1236971_615206431885917_1890748237_n
 قائد ملتِ جعفریہ پاکستان حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی جب کوٹ سلطان پہنچے تو وہاں موجود جے ایس او، جعفریہ یوتھ ، تنظیمی کارکنان اورعلماء کرام سمیت ہزاروں مومنین نے لبیک یاحسین ، جس قوم کا نعره علی ولی . اس قوم کا قائد ساجد علی ،  اللہ واحد . ساجد قائد، شیعہ قوم کے احساسات . ساجد قائد تا حیات کے فلک شگاف نعروں سے اپنے محبوب قائد کا شاندار اور تاریخی استقبال کیا . اس وقت سرزمین لیہ کے ہزاروں غیور مومنین نے ایام فاطمیہ میں مولا علی (علیہ السلام) اور بی بی زہرا (سلام اللہ علیہا) کا نواسہ، نمائندہ ولی فقیہ وقائد ملت جعفریہ پاکستان حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی کا تاریخی استقبال کر کے ولایت سے محبت اور تابع داری کا ثبوت پیش کیا ۔ بعد ازآں قائد ملتِ جعفریہ کو ایک عظیم الشان استقبالی ریلی کی شکل میں کوٹ سلطان سے راجن شاہ بستی توحید مدرسہ جامعہ الفاطمہ زہرا(س) تک لایا گیا-  رپورٹ کے مطابق استقبالیہ ریلی میں موٹر سائکلز اور ہزاروں گاڑیاں تھیں، راستے بھرمیں جمن شاہ ، لیہ ، کوٹلہ حاجی شاہ سمیت مومنین کی بستیوں میں جگہ جگہ استقبالی کیمپس  لگائے گئےتھے جہاں پرمومنین کی سہولیات کا اہتمام کیا گیا تھا – راجن شاہ بستی توحید مدرسہ جامعہ الفاطمہ زہرا (س) پہنچ کرقائد ملتِ جعفریہ نے سالانہ جلسے سے خصوصی خطاب کیا – قائد ملتِ جعفریہ پاکستان حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی نے ملکی و بین الاقوامی حالات پر تبصرہ کرتے ہوئے حکومت پاکستان کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ ہم سے مینار پاکستان دور ہے اورنہ ہی اسمبلی سکٹریٹ ہم سے دور ہے میں کنفرم کرتا ہوں لوگ بھیج رہے ہواور بھیج بھی وہاں رہے ہو جہاں شیعوں کے ساتھ مقابلا ہے توانکار کیوں کرتے ہو-

قائد ملتِ جعفریہ پاکستان نے مزید کہا کہ حکمراں متوجہ رہیں یہ پاکستان کے لیے بہتر نہیں ہے اورنہ ہی ملک کی سلامتی کے لیے بہتر ہے،  میں نےدیکها جو پچھلے دنوں یلغار ہوئی ہے حکمرانوں کی طرف سے، کچھ حکمرانوں نے یہاں سے کرائے کے قاتل بھیج کر وہاں شعیوں کو قتل کروایا، ابھی پھر یلغار ہے تحفے تحائف بھیجے جا رہے ہے ، کیا پیغام دے رہے ہو پاکستان کی عوام کو؟ کل کوئی بھی اٹھ کر قاتلوں کے گروہ بنا سکتا ہے-

حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی نے کہا کہ ابھی صورتحال مشکوک ہے مگر ہم پریشان نہیں انہوں نے ملت جعفریہ کو خطاب کرتے ہوئےکہا کہ میں اس نازک دور میں آپکو آمادہ کرتا ہوں، تیار و ہوشیار رہو- رپورٹ کے مطابق سالانہ جلسے سے  خطاب کے بعد قائد ملتِ جعفریہ دربار محمد علی راجن پور پہنچے جہاں پر مختلف مرحوم مومنین کے لواحقین سے تعزیت  اور فاتحہ خوانی کی – دو روزہ دورہ لیہ میں شیعہ علماء کونسل پاکستان لیہ کے مقامی رہنماؤں سمیت صوبائی صدرعلامہ مظہرعباس علوی بھی اپنے    محبوب قائد کے ہمراہ ہیں-


  • آخرین ویرایش:-
نظرات()   
   

layya-istiqbal-qaed-30314
 قائد ملت جعفریہ پاکستان حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی آج صبح دو روزہ دورہ پر لیہ روانہ ہو چکے ہیں اور لیہ مومنین کی کئی ہفتوں کے انتظار کی گھڑیاں ختم ہونے والی ہیں۔  رپورٹ کے مطابق آج کا جب سورج طلوع  ہوا تو سرزمین لیہ کی بستی بستی ، چوک چوک اور گلی گلی میں جوش و خروش نظر آیا ۔ مومنین بڑے بڑے قافللوں کی صورت میں کوٹ سلطان کی طرف رواں دواں تھے ہرطرف جوش وخروش اورمومنین کا جذبہ قابل دید تھا ۔ جب مختلف قافلے سلطان کوٹ کے مرکزی کاروان سےملحق ہوئے تو استقبالیہ کاروان کئی میلوں تک نظر آنے لگا ۔ اس موقع پرنوجوانوں کا جذبہ دید نی تھا ۔  مختلف نوجوانوں نے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ الحمدللہ ہم لاوارث قوم نہیں بلکہ ہمارے پاس نظام ولایت موجود ہے اور آج ہم قائد ملت جعفریہ پاکستان کو سفیر مولا حسین (علیہ السلام) سمجھ کر تجدید بیعت کیلئے یہاں آئے ہیں ۔

  رپورٹ کے مطابق کوٹ سلطان میں اس وقت قدم رکھنے کی جگہ نہیں رہی اور انتظامیہ حضرات بہت مشکل سے مومنین کو کنٹرول کر رہے ہیں تا کہ استقبالیہ پروگرام اپنی شان و شوکت سے منعقد ہوسکے ۔ اطلاعات کے مطابق قائد ملت جعفریہ کوٹ سلطان سے بستی توحید جائیں گے جہاں پر انہوں نے جامعۃالفاطمہ زہرا (سلام اللہ علیہا ) کے سالانہ پروگرام میں خصوصی شرکت اور صدارتی خطاب فرمائیں گے ۔ جبکہ راستہ میں مختلف بستوں اور شہروں میں استقبالیہ کیمپوں میں بھی مومنین سے خطاب فرمائیں گے ۔


  • آخرین ویرایش:-
نظرات()   
   

allama-arif-wahidi-11
شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ عارف حسین واحدی نے کہا ہے کہ ملک میں ہر شخص عدم تحفظ کا شکار ہے، اقلیتی عبادتگاہوں ، میڈیا پرنسز اور نہتے عوام پر دہشت گردی کے حملے تشویش ناک ہیں، حکومت کیوں قاتلوں کو کیفر کردار تک پہنچا کر نشان عبرت نہیں بناتی۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اتوار کو دورہ سندھ سے واپسی پر ائرپورٹ پرصحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ علامہ عارف حسین واحدی نے کہا کہ پورے ملک میں امن وامان کی مجموعی صورتحال انتہائی تشویشناک ہے۔ ایک جانب مذاکرات کئے جا رہے ہیں مگر دوسری جانب شرپسندوں کو کھلی چھوٹ دیدی گئی ہے وہ جسے چاہتے ہیں جہاں چاہتے ہیں نشانہ بنا ڈالتے ہیں۔ انہو ں نے سندھ میں ہندوعبادتگاہوں پر شرپسندوں کے حملوں کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے مزید کہا کہ ارض وطن میں تمام باشندوں کو مساوی حقوق حاصل ہیں اور انہیں اپنی عبادت کا اپنے انداز میں انجام دینے کا پورا حق ہے شرپسند و دہشت گرد ملک میں افراتفری پھیلا کر اپنے مذموم مقاصد کی کامیابی چاہتے ہیں۔ انہوں نے گزشتہ روز ایک سینئر صحافی پر ہونے والے حملے کی بھی بھرپور الفاظ میں مذمت کی اور کہا کہ ملک میں میڈیا پرنسز، اقلیتی عبادتگاہوں، نہتے عوام ، علماء کرام ، ججز ، وکلاء سمیت ہر شخص عدم تحفظ کا شکار ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب تک حکومت قتل عام کرنیوالے خونی درندوں کو کیفر کردار تک پہنچا کر نشان عبرت نہیں بناتی اس وقت تک امن کا خواب شرمندہ تعبیر نہیں ہوگا۔ اس موقع پر انہوں نے مختلف سوالوں کے بھی جواب دیئے اور کہا کہ حکومت اگر ملک میں امن قائم کرنا چاہتی ہے تو فی الفور قصاص کے قانون پر عملدرآمد یقینی بنائے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے ہمیشہ اتحاد و وحدت کے لئے اپنی توانائیاں صرف کی ہیں اور آئندہ بھی اس پر کاربند رہیں گے کیونکہ ہم سمجھتے ہیں کہ امت مسلمہ کی ترقی کا راز اتحاد میں مضمر ہے۔

قبل ازیں علامہ عارف حسین واحدی نے سندھ کے اضلاع خیرپور، حیدر آباد سمیت دیگر علاقوں کا دورہ کیا اور وہاں عوامی اجتماعات سے خطاب کے علاوہ سندھ کی اہم سیاسی ومذہبی شخصیات سے ملاقاتیں بھی کیں۔


  • آخرین ویرایش:-
نظرات()   
   
یکشنبه 10 فروردین 1393  04:15 ب.ظ
نوع مطلب: (شیعه علماء کونسل مرکز ،) توسط:

1452200_255975981226149_1656001104_n
 تفصیلات کے مطابق قائد ملت جعفریہ پاکستان حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی کی خصوصی ہدایات پرملی پلیٹ فارم شیعہ علما کونسل کے زیراہتمام سانحہ عاشور پنڈی کے اسیران کی رہائی کے لئے محترم سید ذوالفقارعلی ایڈوکیٹ کی سرپرستی میں ایک وکلاء پینل بنایا گیا، جس کی جہد مسلسل سے گذشتہ دنوں 12 اسراء کو رہائی نصیب ہوئی اوراب گذشتہ روز وکیل سید ذوالفقارعلی کی درخواست ضمانت پر مزید 48 شیعہ اسیروں کی رہائی عمل میں لائی گئی ہے اس طرح وکلاء پینل نے اس وقت تک 60 اسیروں کو رہا کراچکا ہے جبکہ باقی ماندہ اسراء کی رہائی کے لئے کوششیں جاری ہیں- واضح رہے کہ اس سے قبل علامہ مظہر عباس علوی کی سربراہی میں شیعہ علما کونسل کے وفد نے رانا ثناء اللہ سے ملاقات کی جس کے نتیجے میں شیعہ اسراء کو رہائی نصیب ہوئی تھی –  رپورٹ کے مطابق رہائی کے موقع پراسیران اہل خانہ کی خوشی اور ملی پلیٹ فارم پر اعتماد دیدنی تھا، اس موقع پر اسیران نے بتایا ہے کہ ملی پلیٹ فارم اورمحترم سید ذوالفقارعلی ایڈوکیٹ کی کوشش سے ہمیں جہلم جیل اور پنڈی جیل میں بھی تمام تر سہولیات مہیا کی گئیں تھیں اورہماری رہائی بھی ان کی مرہون منت ہے۔ قیادت اور ملی پلیٹ فارم ہی تشیع کی امیدوں کا سائباں ہے، قیادت کی سیاسی، اجتماعی پالیسیوں کی جتنی تعریف کی جائے پھر بھی ہم حق ادا نہیں کر پائیں گے-


  • آخرین ویرایش:-
نظرات()   
   

index

 ہم ماضی کی طرح اس مرتبہ بھی گلگت بلتستان کی سیاست میں اپنا بھرپور عملی کردار اداء کرینگے اور تشیع کے حقوق کا دفاع ایوانوں کے اندر جاری رکھیں گے۔ ان خیالات اظہار اسلامی تحریک پاکستان کے صوبائی وزیر پانی و بجلی و ممبر گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی دیدار علی نے گلگت سیکرٹریٹ میں پارٹی ورکرز کے ایک اہم اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں جعفریہ یوتھ اور دیگر ذیلی اداروں کے کارکنان شریک تھے۔ انکا مزید کہنا تھا کہ فی الحال کسی بھی سیاسی جماعت سے باضابطہ اتحاد کا فیصلہ نہیں ہوا تاہم بہت سی سیاسی و مذہبی جماعتیں انتخابی اتحاد کیلئے مسلسل رابطے کر رہی ہیں۔ حتمی فیصلہ اور انتخابی منشور کا اعلان بہت جلد اسلامی تحریک پاکستان کے مرکزی قائدین اپنے دورہ گلگت بلتستان کے موقع پر کرینگے۔


  • آخرین ویرایش:-
نظرات()   
   

qaed-emillat-jafaria

 قائد ملتِ جعفریہ پاکستان حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی نے کہا ہے کہ حکومت کی پیش کردہ قومی سلامتی دفاعی پالیسی کے قابل عمل جزیات کا بغور جائزہ لیا جا رہا ہے اور اگر اس پالیسی میں بھی حکومت عوام کے جان و مال کے تحفظ میں ناکام رہی تو ہمیں حق حاصل ہے کہ اپنے تحفظ کے ہم خود قومی دفاعی پالیسی تشکیل دیں گے اور ملک میں امن وامان کا ابتر صورتحال کو بہتر بنانے کیلئے نئے قوانین کے بجائے مروجہ ملکی قوانین پر عملدرآمد کی ضرورت ہے تاکہ دہشت گردوں اور بد امنی کے شکار عوام کو فوری انساف مہیا کرکے عوام کے اعتماد کو بحال کیا جاسکے ۔

ان خیالات کا اظہا رقائد ملت جعفریہ پاکستان حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی نے خیبر پختونخواہ کے دو روزہ دورے کوہاٹ اور ہنگو میں چہلم کے سلسلہ میں منعقدہ مختلف پروگراموں اور نماز جمعہ کے بڑے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ محسوس ہوتا ہے کہ قومی سلامتی پالیسی میں دہشت گردی کا شکار سٹیک ہولڈر کو اعتماد میں نہیں لیا گیا ۔انہوں نے کہا کہ عوام کے جان و مال کا تحفظ حکومت کی اولین ذمہ داری ہونی چاہیے اس ضمن میں عوام کے بجائے دہشت گردوں کے خلاف حکومت کو سخت گیر اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے ،انہوں نے کہا کہ سزائے موت کے قوانین پر عمل درآمد کو یقینی بناتے ہوئے قاتلوں کو فوری سزائے موت دی جائے جس کی ہر مذہب اور سماجی قانون میں تا کید کی گئی ہے ۔تا ہم اس کے بر عکس اس ملک میں حکمرانوں کی روش الٹی گنگا بہنے کے مصداق ہے ،انہوں نے شہداء ہنگو اور کو ہاٹ سمیت ملک بھر میں دہشتگردی کے خلاف آہنی حکومتی اقدامات کی اپیل کرتے ہوئے ملک کی عوام کے جان ومال کے تحفظ کو یقینی بنانے کا بھی مطالبہ کیا ۔قبل ازیں قائد ملت جعفریہ پاکستان حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی نے ابراہیم زئی میں تغمہ شجاعت پانے والے شہید طالب علم اعتزاز حسن اور معروف عالم دین علامہ حسین الاصغر مرحوم کے مرقد پر پھولوں کی چادر چڑھائی اور فاتحہ خوانی کی ،انہوں نے معروف مذہبی سیاسی شخصیت پیر زاہد علی شاہ سے ملاقات کی اور ملکی ،سیاسی و مذہبی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا ۔بعد ازاں وہ مٹھہ خان اور مرئی گئے جہاں انہوں نے شہداء ہنگو اور کے چہلم سے خطاب کیا جبکہ کوہاٹ میں معروف سیاستدان اور سابق صوبائی وزیر سید قلب حسن کی جانب سے دئے گئے عشائیے سے خطاب کے بعد اگلے روز شہدائے کو ہاٹ اور نماز جمعہ کے اجتمارع سے بھی خطاب کیا ۔اس موقع پرشیعہ علماء کونسل خیبر پختونخواہ کے صوبائی صدر علامہ محمد رمضان تو قیر ، کوہاٹ ڈسٹرکٹ کے صد۵ر علامہ حمید امامی اور سیاسیے و سماجی رہنما ابن علی بنگش اور مہتاب حسین سمیت دیگ علماء کرام و زعمابھی موجود تھے ۔


  • آخرین ویرایش:-
نظرات()   
   

allama-aarif-wahidi

 گلگت بلتستان کے الیکشن میں بھر پور حصہ لینگے ماضی میں ہم نے گلگت بلتستان میں حکومت بنائی تھی انشاءاللہ اس بار بھی حکومت بنائیں گے، کسی بھی سیاسی پارٹی سے اتفاق ، الحاق کی بات کرنا قبل از وقت ہے، شیعہ علماء کونسل کی صوبائی قیادت سے مشاورت کے بعد اگر ضرورت پڑے تو الحاق کی بات ہوگی۔

گلگت بلتستان کے تمام حلقوں سے امیدوار کھڑے کرینگے، ان خیالات کا اظہار شیعہ علماء کونسل کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ عارف حسین واحدی نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا شیعہ علماء کونسل کے مرکزی رہنما جلد گلگت بلتستان کا دورہ کر کے انتخابی منشور کا اعلان کر ینگے ہرحلقے سے امیدوار رابطے میں ہیں جن میں کچھ سیاسی پارٹیوں کے لوگ بھی شامل ہیں انہوں نے کہا جب ہماری حکومت تھی ہم نے گلگت بلتستان کے ہر ایشو کو ہر فورم پر اٹھایا اور ریکارڈ ترقیاتی کام کیے۔ ہمارا ہدف گلگت بلتستان میں امن وامان قائم کرنااور محبت و بھائی چارے کو فروغ دینا ہے اور ایک مضبوط حکومت کا قیام اور علاقہ کے ترقی ہماری اولین ترجیح ہے۔


  • آخرین ویرایش:-
نظرات()   
   

allama-mazhar-abbas-alvi

شرپسند دہشتگردوں کی فائرنگ سے شیعہ علماء کونسل خانپور یونٹ کے صدر ڈاکٹر غلام مصطفی شہید ہوگئے ۔  رپورٹ کے مطابق شرپسند دھشتگردوں نے ڈاکٹر غلام مصطفی کو اس وقت نشانہ بنایا جب وہ نماز مغربین کے بعد اپنے گھر پہنچے تھے ۔ جیسے ہی اپنے گھر کے سامنے پہنچے تو شرپسند عناصر نے ان پر اندھادہند فائرنگ کر دی جس کے نتیجہ میں ڈاکٹر غلام مصطفی شدید زخمی ہوچکے اور زخموں کا تاب نہ لاتے ہوئے شہادت کے عظیم رتبہ پر فائز ہو گئے۔ رپورٹ کے مطابق شرپسند دہشتگرد اپنے آباء و اجداد کی طرح موقع سے فرار ہونے میں کامیاب رہے ۔

آج سینکڑوں مومنین، شیعہ علماء کونسل ، جعفریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن ،جعفریہ یوتھ کے کارکنان سمیت لواحقین کی موجودگی میں شہید ڈاکٹر غلام مصطفی کی نماز جنازہ رحیم یار خان کے بزرگ رہنما علامہ علی شیر کی اقتداء میں ادا کر دی گئی ۔ جس کے بعد مومنین کی آہ و سسکیوں کے درمیان شہید کو علاقائی قبرستان میں دفن کردیا گیا ۔

شیعہ علماء کونسل پنجاب کے صوبائی صدر علامہ مظہر عباس علوی نے اپنے مذمتی بیان میں اس سانحہ کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ دن بہ دن ملک کی صورتحال ابتر سے ابتر ہوتی جا رہی ہے، ایک ہی علاقے میں ہمارے مخلص اور فعال کارکنان اور قومی قیادت کے با وفا ساتہیوں کو چن چن کر شہید کیا جارہا ہے مگر حکومت اور انتظامیہ ٹس سے مس بھی نہیں ہو رہی ۔ ایسا لگتا ہے کہ حکومت اور ریاستی ادارے صرف تماشائی بنے ہوئے ہیں اور قرآنی اور اسلامی احکامات کو نذر انداز کرکے دہشتگردوں کی حوصلہ افزائی کی جارہی ہے ۔ انہوں نے آخر میں شہید کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے لواحقین اور ورثا کے ساتھ ہمدلی اور یکجہتی کا اظہار کیا ۔


  • آخرین ویرایش:-
نظرات()   
   

allama-arif-wahidi-11

شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی آفس میں گلگت کے صدر علامہ شیخ مراز علی نے اعلیٰ وفد کے ہمراہ شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ عارف حسین واحدی سے ملاقات کے دوران گلگت بلتستان کے سیاسی و مذہبی صورتحال سے آگاہ کرتے ہوئے گلگت آمد کی دعوت دی اور سیاسی طور پر جے بی کے ہونیوالے انتخابات میں شرکت کے حولے سے کیجانیوالی بھرپور تیاریوں اورجے بی میں اتحاد و وحدت کے حوالے سے اپنی کاوشوں کو بیان کیا جس پر شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ عارف حسین واحدی نے دورے کی دعوت قبول کرتے ہوئے کہا کہ ہماری تنظیمی اور قومی پالییسی ہے کہ ہم گلگت بلتستان کی سیاست اور انتخابات میں بھرپور کردار ادار کریں گے۔ اوروہاں کے کارکنوں کیلئے پیغام ہے کہ انتخابات میں شرکت کرنے کیلئے بھرپور تیاریاں کریں، اس کے علاوہ انہوں نے کہا کہ جیسا کہ ہم پورے ملک میں اتحاد و وحدت کیلئے بھرپور کوششیں کررہے ہیں اس ملک میں اتحاد امت کیلئے ہمارے قائد محترم حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد نقوی کی کوششیں ناقابل فراموش ہیں۔ اسی طرح گلگت بلتستان میں بھی تمام مسالک کے درمیان اتحاد و وحدت قائم کرنے کیلئے اسلامی تحریک پاکستان بھرپور کردار ادا کریگی۔

علامہ عارف حسین واحدی نے مزید کہا کہ جو قوتیں ایک سازش کے تحت گلگت بلتستان میں فرقہ واریت کی آگ لگانا چاہتے ہیں ہم ان کی کوششوں کو ناکام بنائیں گے اور تمام مسالک کے ساتھ ملکر اتحاد و حدت کی فضا قائم کریں گیاور کسی صورت میں بھی ہمارے اندر انتشار و اختراق پیدا کرنا ممکن نہیں، امت کیلئے بھی ہمارا پیغام یہ ہے کہ اگر ہم متحد رہیں گے تو اسلام سربلند ہوگا۔ وطن عزیز مستحکم ہوگا۔ اور انتشار پھیلانے والوں کی کوششوں کی حوصلہ شکنی ہوگی۔


  • آخرین ویرایش:-
نظرات()   
   

1620213_577587312325991_1455671865_n

انجمن محبان حسینی اہلیان گلگت کراچی کی جانب سے شہید آغا ضیاء الدین رضوی کی برسی کا انقعاد کیا گیا جس میں شیعہ علما کونسل کراچی ڈویژن کے صدرحجت الاسلام علامہ جعفر سبحانی نے خطاب کیا – علامہ جعفر سبحانی کا کہنا تھا کہ شہید آغا ضیاء الدین رضوی کی فکر پاکیزہ فکر تھی انکی فکر کے کیی پہلو تھے جو اہم پہلو تھا وہ مرکزیت اور قیادت سے مربوط رہنا تھا شہید آغا ضیاء الدین رضوی کو کسی نے گلگت بلتستان کا قائد نہیں بنایا تھا بلکہ انہیں اپنے الہی کردار اور مجاہدانہ سوچ کی بدولت عوام الناس میں مقبولیت ملی اور گلگت بلتستان کی سطح پر قیادت کے اہل قرار پاے -   رپورٹ کے مطابق برسی سے علامہ علی مرتضیٰ زیدی علامہ شیخ حسن صلاح الدین نے بھی خطاب کیا جبکہ مرتضیٰ نگری نے ترانہ شہادت پیش کیا


  • آخرین ویرایش:-
نظرات()   
   

n00335466-t

 

شیعہ علماء کونسل گلگت بلتستان کے صدر اور مرکز انجمن امامیہ بلتستان کے صدرعلامہ آغا عباس رضوی نے شیعہ علماء کونسل بلتستان کے فعال کارکن اور سماجی شخصیت محمد یوسف اخونزادہ کے نوجوان اکلوتے فرزند کمیل عباس کی رحلت پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے اپنے بیان میں کہا کہ اس افسوسناک موقع پر ہم یوسف اخونزادہ اور لواحقیقن کے دکھ میں برابر کے شریک ہیں۔ واضح رہے کہ کمیل عباس اسلام آباد میں تعلیم حاصل کر رہے تھے۔ انکی جسد خاکی کو انکے آبائی قبرستان نیورنگاہ میں سپرد خاک کیا گیا ہے۔ انکی کی نماز جنازہ شیعہ علماء کونسل گلگت بلتستان کے صدر آغا عباس رضوی کی اقتدا میں پڑھی گئی۔


  • آخرین ویرایش:-
نظرات()   
   


1620771_471400806305390_1931678632_n
 کراچی میں شہید حسن ابن حسین (شبو بھائی) کی برسی کی مناسبت سے مجلس عزا کا انعقاد کیا گیا – مجلس عزا سے خطاب کرتے ہوئے خطیب باب العلم علامہ شہنشاہ حسین نقوی نے کہا کہ شہید اعلی شخصیت کے مالک تھے اہل سنت ہوں یا اہل تشیع سب ان کے کردار اور اخلاق کی گواہی دیتے ہیں انہوں نے مزید کہا کہ جس طرح سب کی زندگیاں ایک جیسی نہیں ہوتیں اسی طرح سب کی شہادتیں بھی ایک جیسی نہیں ہوتیں شہادتوں کے درجات میں سے شہید بزرگوار اعلی درجے پہ فائز ہوئے۔

خطیب باب العلم اور شیعہ علماء کونسل کے مرکزی رہنما علامہ شہنشاہ حسین نقوی نے کہا کہ پاکستان کی زمین جتنی مشکل زمین ہے اتنے کھلاڑی سمجھ دار نہیں ہیں ، جو دہرنوں میں بیٹھے تھے یا جو دہرنوں میں نہیں بیٹھے تھے، یہ دہرنوں کی سیاست اور دہرنوں کا نتیجہ کسی کوحق نہیں پہنچتا کہ وہ کہے کہ کون قوم سے مخلص ہے اور کون نہیں ، ممکن ہے جو خدمت دہرنے میں بیٹھ کر کی گئی کسی نے دہرنے میں نہ آکر بھی اتنی ہی خدمت کی ہو، ہمیں اس کا فیصلہ کرنے کا حق نہیں ہے، جو دہرنوں میں بیٹھے تھے انہیں بھی اجر و ثواب ملے گا جو نہیں بیٹھے تھے انہیں بھی اجر و ثواب ملے گا ،جو دہرنے میں تھا یا نہیں تھا دونوں کا ثواب برابر ہے- انہوں نے کہا کہ اس سال مستونگ واقعے پر ہونے والے دہرنوں پرمیں کوئی تبصرہ نہیں کروں گا سوائے ایک جملے کے اس زیاده سننے کے نہ آپ متحمل ہیں اورنہ میں کہہ سکتا ہوں اور وہ جملہ یہ ہے کہ اداروں نے اگرطئے کر لیا ہے کچھ کرنے کا تو مجھے اپنا کندھا نہیں دینا چاھئے جو کرنا ہے تم خود کرو- علامہ شہنشاہ حسین نقوی نے کہا کہ سیاسی دنیا میں کوئی کسی کو بڑا ماننے کو تیار نہیں اور پوچھا جا رہا ہے کہ علماء کیوں نہیں آئے تو تم پوچھو گے کہ علماء کیوں نہیں آئے یا تم بتاوٴ گے کہ تم علماء کی بغیر اجازت کیوں گئے؟ ہماری مرکزی قیادت اور سکریٹری جنرل نے اپنی ذمہ داری انجام دی ہے اور دونوں جماعتوں نے اپنی اپنی تشخیص کے مطابق  ذمہ داری انجام دی ہے بہت ہوگیا یہ غیبتوں کی محفلیں بند ہونی چاھئیں یہ سلیقہ ای اختلاف تھا ہدف میں اختلاف نہیں تها یہ طریق میں اختلاف ہے ہدف میں اختلاف نہیں ہے، احتجاج نہ کریں تو کیا کریں کہاں جائیں لیکن ہردفعہ ایک جیسا احتجاج بھی مفید اور منظور نہیں ہے جو ذمہ دار ہیں ان کو کام کرنے دیں اور فیصلہ کرنے کا حق بھی انہیں کو ہے جو زیادہ جانتے ہیں -


  • آخرین ویرایش:-
نظرات()   
   


qyadat-pressconfarnce-25112013

 راولپنڈی قائد ملت جعفریہ پاکستان حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی کی پریس کانفرنس میں کیے جانے والا مطالبے کے ” جوڈیشل کمیشن مسجد کے ساتھ  امام باگاہ اور ملحقہ املاک کا بھی دورہ کریں” جسکے بعد  کمیشن کا شیعہ علما کونسل کے سکٹری جرنل علامہ عارف واحدی سے رابطہ اور تمام جلائی جانے والی امام بارگاہوں ور املاک  کا دورہ.

تفصیلات کے مطابق گزشتہ دنوں قائد ملت جعفریہ پاکستان حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی  نے پریس کانفرنس میں مطالبہ کیا تھا جوڈیشل کمیشن سے ہمیں توقع ہے کہ وہ غیر جانبداری سے حقائق کو عوام کے سامنے منظر عام پرلائیں اور مساجد و امام باگاہ اور ملحقہ املاک کا بھی دورہ کرکے نقصانات،حقائق اور واقعات کا جائزہ لے کر انصاف کے تقاضوں کو پوراکریں گے ۔ جس کے بعد جوڈیشل کمیشن کا شیعہ علما کونسل کے سکٹری جرنل علامہ عارف واحدی سے رابطہ اور تمام جلائی جانے والی امام بارگاہوں کا دورہ


  • آخرین ویرایش:-
نظرات()   
   
  • تعداد کل صفحات :43  
  • 1  
  • 2  
  • 3  
  • 4  
  • 5  
  • 6  
  • 7  
  • ...  
آخرین پست ها